Tuesday, 2 December 2014



فلپ ہیوزکابرتھ ڈے
راشد الاسلام
سب ایڈیٹر
روزنامہ عزیزالہند
9810863428
آج اگر آسٹریلوی کھلاڑی فلپ ہیوززندہ ہوتے تو وہ اپنا 26 واں سالگرہ منا رہے ہوتے۔ 30 نومبر 1988 کو برسبین اور سڈنی کے درمیان موجود ایک چھوٹے سے قصبے میں  پیدا ہوئے ہیوز کی موت کا آج پورے دنیا میں غم منایا جا رہا ہے۔ اسی درمیان ان  کے سب قریبی رہے آسٹریلیا کرکٹ ٹیم کے کپتان و ان کے  چھوٹا بھائی ماننے والے مائیکل کلارک نے ایک تحریری خراج تحسین کے ذریعہ ہیوز کو یاد کیا۔کلارک اپنے اس بیان میں کہتے ہیں، 'میرا کوئی سگا بھائی نہیں ہے لیکن مجھے فخر ہے کہ میں نے فلپ کو اپنا بھائی سمجھا۔ اس کو جان کر ہی میں آج ایک بہتر انسان بنا ہوں۔ اب بھی یہ یقین کرنا مشکل ہے کہ اتنے شاندار انسان کے ساتھ ایسا واقعہ کیسے ہو سکتی ہے۔ کرکٹ کے کھیل میں اس کی کئی کامیابیاں درج ضرور ہیں لیکن ایک انسان کے طور پر وہ اس سے بھی بہتر تھے۔ اپنی غلطی ماننے والا، اچھے دل والا، لوگوں کے چہرے پر ہنسی لانے والا اور ایک بچے کی طرح زندگی گزارنے والا … میں اس کے بارے میں بولتا رہ سکتا ہوں۔ وہ دل سے ایک چھوٹے شہر کا لڑکا تھا جس کے اندر مثالی اور کام کے تئیں لگن جم کر بھری ہوئی تھی۔ یہ بتانا آسان تھا کہ اس کے اندر یہ خوبیاں کہاں سے آئی تھیں۔ گزشتہ چند دنوں میں اس کے اہل خانہ نے جس طرح سے چیزوں کو سنبھالا ہے اس سے صرف اور صرف وحی ملتی ہے۔ میرا اور آسٹریلوی کرکٹ خاندان کی حمایت ان کے ساتھ ہمیشہ رہے گا، جب اور جہاں وہ چاہیں۔ میں نے پہلی ملاقات میں ہی اس کے قریب کھینچ لا  تھا۔ وہ بالکل بھی پیچیدہ نہیں تھا، جو اس کے ساتھ جو آپ کو لگتا تھا، وہی آپ کو ملتا تھا. مجھے نہیں لگتا، اوپر کی سطح پر اپنے 12 سال کے کیریئر میں میں کبھی اتنے اماندار اور صاف دل والے ساتھی کھلاڑی سے ملا۔ جب کبھی وہ ٹیم میں ہوتا تھا اور اس سے رنز نہیں بن رہے ہوتے تھے، تو اس نے کبھی کسی چیز کی شکایت نہیں کی بلکہ دوبارہ محنت کی۔ تمہاری کمی ہمیشہ کھلے گی ہیوز ۔ کبھی نہیں بھولوگا. ہیپی برتھڈے۔آسٹریلوی بلے باز ہیوز سڈنی کے ایک ہسپتال میں داخل تھے۔ گذشتہ روز شیفیلڈ شیلڈ کے ایک میچ کے دوران انھیں نیو ساتھ ویلز کے بولر شان ایبٹ کا بانسر لگا تھا جس کے نتیجے میں وہ پچ پرگر پڑے تھے۔ شیلفیڈ شیلڈ میچ کے دوران سر میں چوٹ لگنے سے شدید طور پر زخمی ہوئے آسٹریلوی بلے باز فلپ ہیوز اب زندگی کی جنگ ہارگئے۔ٹیسٹ ٹیم میں واپسی کی ڈیوڑھی پر کھڑے ہیوز کو سین ایبٹ کا بائونسر سر میں لگا۔اس کے بعد ان کا سینٹ ونسنٹ ہسپتال میں آپریشن کرایا گیا۔اس درمیان کرکٹ آسٹریلیا نے ہیوز کے اعزاز میں شیفیلڈ شیلڈ کے موجودہ دورے کے میچ منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ۔آسٹریلیا کی معروف شیفلڈ شیلڈ ٹرافی کے میچ کے دوران زخمی ہوئے بڑے بلے باز فلپ ہیوج زندگی کی جنگ جیت نہیں پائے اور ان کی دردناک موت ہو گئی۔ان کی موت کے بعد کرکٹ کی دنیا صدمے میں ہیں۔ فلپ ہیوج کو شیفلڈ شیلڈ ٹرافی کیلئے ساتھ آسٹریلیا اور نیو ساتھ ویلز کے درمیان کھیلے جا رہے میچ کے دوران فاسٹ بولر سین ایبٹ کی ایک باؤنسر سر پر لگی تھی۔اس حادثے کے بعد ان کی حالت سنگین ہو گئی تھی اور انہیں علاج کے لئے سینٹ ونسنٹ ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔اس کے بعد ہسپتال میں ان کا آپریشن بھی کیا گیا۔آپریشن کے بعد بھی وہ مسلسل کوما میں تھے۔ آسٹریلیا کے لئے 26 ٹیسٹ میچ کھیل چکے ہیوج ٹیسٹ ٹیم میں جگہ بنانے کے لئے کھیل رہے تھے کیونکہ کنگارو کپتان مائیکل کلارک کے زخمی ہونے کی صورت میں ٹیم کو ایک بلے باز کی ضرورت تھی۔امید ظاہر کی جا رہی تھی کہ انہیں 4 دسمبر سے ہندوستان کے خلاف شروع ہو رہے ٹیسٹ سیریز کے لئے ٹیم میں شامل کیا جا سکتا ہے-زخمی ہونے سے پہلے وہ 116 گیند کھیل کر 9 چوکوں کی مدد سے 63 رن بنا چکے تھے-ان زخمی ہونے کے بعد کرکٹ آسٹریلیا نے ہیوج کے اعزاز میں شیفلڈ شیلڈ کے موجودہ دور کے باقی میچ کو منسوخ کر دیا تھا۔ بی بی سی اورسوشل سائٹ کے مطابق کرکٹ آسٹریلیا کے مطابق آسٹریلوی بیٹسمین فلپ ہیوز وفات پا گئے ہیں۔ انھیں منگل کو سڈنی میں آسٹریلیئن فرسٹ کلاس کرکٹ کے ایک میچ کے دوران سر پر گیند لگنے سے شدید چوٹ آئی تھی۔آسٹریلین کرکٹ بورڈ کے سربراہ جیمز سدرلینڈ نے کہا: اس واقعے نے ہم سب کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ کھیل کی دنیا میں لفظ المیہ عام استعمال کیا جاتا ہے، لیکن یہ عجیب و غریب حادثہ صحیح معنوں میں المیہ ہے۔آسٹریلیا کے کپتان مائیکل کلارک نے فل ہیوز کے والدین، بہن میگن اور بھائی جیسن کی جانب سے سینٹ ونسنٹ ہسپتال میں ایک بیان پڑھ کر سنایا، جس میں کہا گیا ہے کہ ہمارے عزیز بیٹے اور بھائی فلپ کی موت ہمارے لیے تباہ کن ہے۔ گذشتہ چند روز بہت مشکل رہے ہیں۔ ہم خاندان کے افراد، دوستوں، کھلاڑیوں، کرکٹ آسٹریلیا اور عوام کی جانب سے مدد کی قدر کرتے ہیں۔کرکٹ فلپ کی زندگی تھی اور ہمارا پورا خاندان ان کی اس کھیل کے ساتھ محبت میں شریک تھے۔ ہم سینٹ ونسنٹ ہسپتال کے تمام طبی عملے اور نیوساتھ ویلز کرکٹ کے میڈیکل سٹاف کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔اس سے قبل کرکٹ آسٹریلیا کے ایک ترجمان کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ آپ کو یہ بتانا میرا افسوس ناک فرض ہے کہ تھوڑی دیر پہلے فلپ ہیوز چل بسے۔ منگل کو کوما میں چلے جانے کے بعد سے انھیں ہوش نہیں آیا۔وفات پانے سے پہلے وہ تکلیف میں نہیں تھے اور ان کے اردگرد ان کا خاندان اور دوست تھے۔کرکٹ کی کمیونٹی کو ان کے وفات پانے پر افسردہ ہے اور ان کے خاندان اور دوستوں کے ساتھ افسوس کا اظہار کرتی ہے۔آسٹریلوی وزیرِ اعظم ٹونی ایبٹ نے بھی فلپ ہیوز کو خراجِ تحسین پیش کیا ہے۔انھوں نے کہا کہ ان کی موت کرکٹ اور ان کے خاندان کے لیے بہت ہی افسوس ناک واقعہ ہے۔بائیں ہاتھ کے آسٹریلوی بیٹسمین کو سٹریچر پر میدان سے باہر لے جایا گیا اور پھر فورا ایمبولنس پر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان کی سرجری ہوئی اور انھیں کوما میں رکھا گیا تھا۔کرکٹ آسٹریلیا نے اس بات کی بھی تصدیق کی تھی کہ اس دور کے شیفیلڈ شیلڈ میچوں کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔فل ہیوز نے 2009 سے سنہ 2013 کے درمیان 26 ٹیسٹ میچوں میں آسٹریلیا کی نمائندگی کرتے ہوئے تین سنچریوں اور سات نصف سنچریوں کی مدد سے ڈیڑھ ہزار سے زیادہ رنز بنائے تھے۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق فلپ ہیوز کی موت کے سوگ میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلے جانے والے تیسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن کا کھیل ایک دن کے لیے موخر کر دیا ہے۔بی سی سی آئی نے انہیں خراج عقیدت پیش کرتے  ہوئے اپنے ٹوئٹر پیج پر لکھا، فلپ ہیوج کے خاندان کوصبر اورہمت حوصلہ دے خدا فلپ کی روح کو امن دیے۔چمپئن بلے باز سچن تندولکر نے لکھا فل کے بارے میں سن کر حیرت زدہ ہوں۔آسٹریلیا کے خلاف برسبین میں چار دسمبر سے شروع ہو رہے پہلے ٹیسٹ میں بھارت کی کپتانی کرنے جا رہے وراٹ کوہلی نے اسے کرکٹ کے لئے خوفناک دن کہا۔انہوں نے ٹوئٹر پر لکھا، فلپ ہیوج کی خبر سن کر بہت زیادہ دکھی ہوں۔کرکٹ کے لئے یہ خوفناک دن ہے۔خدا فلپ کی روح کو امن دے اور ان کے خاندان کو اس دکھ پر صبر پانے کی طاقت دے۔بھارتی بلے باز روہت شرما نے سین ایبٹ کے تئیں بھی ہمدردی ظاہر کی ہے۔انہوں نے کہا، کرکٹ کی دنیا میں المناک دن ہے۔خدا فلپ کی روح کو امن دے۔ یوراج سنگھ نے ہیوج کی موت کو کھیل کے لئے سیاہ دن کہا۔انہوں نے لکھا، کرکٹ کے لئے سیاہ دن ہے یقین نہیں آتا کہ فلپ ہیوج نہیں رہا۔اس کے خاندان  کے غم میں شریک ہوں۔سریش رائنا نے ٹویٹ کیا، دکھی اور غمزہہوں۔فل ہیوج تم ہمارے دلوں میں رہو گے۔عالمی کرکٹ کے لئے بدترین دن آسٹریلوی کوچ ڈیرین لیمین نے لکھا آرآئی پی لٹل چیپ ہم تمہیں بھلا نہیں سکیں گے۔ہیوج خاندان کے لئے محبت اور دعائیں۔سابق کپتان اور وکٹ کیپر ایڈم گلکرسٹ نے اس خبر پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا، نہیں، نہیں، نہیں، نہیںآرآئی پی فلپ ہیوجآسٹریلیا کے عظیم فاسٹ بولر گلین میگرا اور سابق سلامی بلے باز میتھیو ہیڈن نے بھی ان کے خاندان کے تئیں ہمدردی ظاہر کی۔میگرا نے لکھا فل ہیوج کی موت کی المناک خبر ملی۔ہم اس کے اہل خانہ کے غم میں برابرکے شریک ہیں۔میتھیو ہیڈن نے ٹوئٹر پر لکھا، چھوٹے بھائی خدا تمہاری روح کو امن دے۔خدا تمہیں ہمیشہ اپنی ہتھیلی پر بٹھایے۔ہیوج خاندان کے تئیں ہمدردی۔جنوبی افریقہ کے آل جے پی ڈومنی نے ٹوئٹر پر لکھا، ہیوج خدا تمہاری روح کو امن دے۔اس وقت الفاظ سے کسی کے جذبات کو اظہار نہیں کیا جا سکتا۔اس کے خاندان، دوستوں اور ٹیم کے لئے دعائیں۔جنوبی افریقہ کے سابق کپتان گریم اسمتھ نے اور موجودہ کپتان اے بی ڈولیرس بھی اس خبر سے کافی دکھی ہیں۔اسمتھ نے لکھا، اندر سے کافی ٹوٹا ہوا محسوس کر رہا ہوں۔میرے پاس الفاظ نہیں ہے،ان کے خاندان اور دوستوں کے بارے میں سوچ رہا ہوں۔بلے باز فلپ ہیوجس کے بائونسر سے زخمی ہونے اور ہسپتال میں ان کے سر کا آپریشن کئے جانے سے گھبرائے نیو ساؤتھ ویلس اور جنوبی آسٹریلیا کے کھلاڑیوں کو کائونسلنگ کی پیشکش کی گئی ہے۔بائیں ہاتھ کے اس بلے باز کو سینٹ کیرن ہسپتال لے جایا گیا ۔سڈنی کرکٹ گراؤنڈ پر سین ایبوٹ کے بائونسر پر زخمی ہونے کے بعد وہ کوما میں چلے گئے۔شیفیلڈ شیلڈ کے میچ میں کھیلتے ہوئے جنوبی آسٹریلیا کے ہیوجس نیو ساؤتھ ویلس کے گیند باز بینڈکی گیند سر پر لگنے سے منہ کے بل گر گئے۔ہیوجس کو ا سٹریچر میں باہر لے جایا گیا اور ہسپتال لے جانے کے بعد ان کا آپریشن کیا گیا ہے۔اس واقعہ سے دونوں ٹیموں کے کھلاڑی سکتے میں اور گھبرائے ہوئے ہیں کیونکہ انہوں نے 25سالہ کھلاڑی کو میدان پر بے ہوش پڑے دیکھا۔

سب ایڈیٹر
روزنامہ عزیزالہند
9810863428


No comments:

Post a Comment